Home / World / غلاف کعبہ کی تبدیلی کی روح پرور تقریب
kaba

غلاف کعبہ کی تبدیلی کی روح پرور تقریب

kabaمکہ مکرمہ: دنیا بھر سے آنے والے تقریباً 15 لاکھ مسلمان فریضہ حج کی ادائیگی اور اپنے پروردگار سے بخشش کی طلب میں مشغول ہیں۔

9 ذی الحج کو نماز فجر کے بعد عازمین نے حج کا رکن اعظم ’وقوف عرفہ‘ ادا کرنے کے لیے میدان عرفات کا رخ کیا۔

میدان عرفات میں دن بھر قیام اور مغرب کی اذان کے بعد عازمین واپس مزدلفہ روانہ ہوجائیں گے، جہاں نماز مغرب و عشاء ایک ساتھ ادا کی جائے گی۔

رات بھر مزدلفہ میں کھلے میدان اور پہاڑوں پر قیام کے بعد عازمین 10 ذی الحج کو فجر کی نماز کے بعد منیٰ روانہ ہوں گے، جہاں شیطان گےکو کنکریاں مارنے، قربانی کرنے اور سر منڈوانے کے بعد عازمین کی واپس مکہ مکرمہ روانگی ہوگی۔

احرام کھولنے کے بعد حاجی خانہ کعبہ جاکر ’طواف زیارت‘ کریں گے

9 ذی الحج کو ہر سال کی طرح اس سال بھی ’غلاف کعبہ‘ کو لاکھوں عازمین کی موجودگی میں پرنور و پروقار تقریب میں تبدیل کردیا گیا۔

ہر سال غلاف کعبہ کی تبدیلی کی روح پرور تقریب عازمین کے عرفات پہنچنے پر منعقد کی جاتی ہے، غلاف کعبہ کو کسوہ بھی کہتے ہیں اور اس کی تیاری میں 670 کلو گرام خالص ریشم اور سونے چاندی کے 150 کلو گرام دھاگے کا استعمال کیا جاتا ہے۔

غلاف کعبہ کا سائز 658 مربع میٹر ہوتا ہے اور یہ غلاف 47 حصّوں پر مشتمل ہوتا ہے اور ہر حصہ 14 میٹر لمبا اور 95 سینٹی میٹر چوڑا ہوتا ہے۔

غلاف کعبہ کی تیاری میں تقریباً ایک سال کا عرصہ لگتا ہے اور غلاف کی تبدیلی کا عمل چھ گھنٹوں میں مکمل ہوتا ہے۔

زمین سے تین میٹر کی بلندی پر نصب خانہ کعبہ کے دروازے کی لمبائی 6 میٹر اور چوڑائی 3 میٹر ہے اور غلاف کعبہ چار دیواروں کے علاوہ دروازے پر بھی آویزاں کیا جاتا ہے۔

نئے غلاف سے آراستہ کرنے سے قبل خانہ کعبہ کو عرق گلاب سے معطر اور آب زم زم سے غسل دینے کی تقریب ہر سال باقاعدگی سے ادا کی جاتی ہے۔

اس موقع میں سعودی عرب کے حکام، اسلامی ممالک کے وفود اور ممتاز زائرین شریک ہوتے ہیں، تاریخی اعتبار سے بیت اللہ پر سب سے پہلے غلاف حضرت اسماعیل علیہ السلام نے چڑھایا تھا۔

About Daily City Press

Check Also

pa

امریکہ اور پاکستان تعلقات جنوبی ایشیا میں استحکام کا باعث

  دونوں وزرائے خارجہ نے دو طرفہ اور خطے میں اپنے مشترکہ اہداف کے حصول …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *