Home / City News / پاکستان: زبردستی مذہب تبدیل کروانا جرم قرار

پاکستان: زبردستی مذہب تبدیل کروانا جرم قرار

پاکستان کے صوبہ سندھ میں اب جبری طور پر مذہب تبدیل کروانے والے کو عمر قید تک کی سزا سنائی جا سکے گی۔ اس نئے قانون کا مقصد اقلیتوں اور نابالغ افراد کو تحفظ فراہم کرنا بتایا گیا ہے۔صوبہ سندھ میں آج ایک نیا قانون منظور کر لیا گیا ہے، جس کے تحت جبری طور پر مذہب تبدیل کروانے والے شخص کو عمر قید کی سزا سنائی جائے گی۔؃اس نئے قانون کے تحت جو بھی شخص اپنا مذہب تبدیل کرنا چاہتا ہے، اسے کم از کم تین ہفتے یا اکیس دن انتظار کرنا ہو گا۔ بل کے متن کے مطابق، ’’یہ ضروری ہے کہ جبری طور پر مذہب کی تبدیلی کو جرم قرار دیا جائے اور اس گھناؤنے طریقہ ء کار کے متاثرین کو تحفظ فراہم کیا جائے۔‘‘صوبہ سندھ میں جبری مذہب کی تبدیلی کا ایک عرصے سے مسئلہ چلا آ رہا ہے۔ سندھ میں مقیم اقلیتی ہندو برادری کا الزام عائد کرتے ہوئے کہنا ہے کہ ان کی لڑکیوں کو زبردستی مسلمان کر لیا جاتا ہے اور مسلمان لڑکوں سے شادیاں کروا دی جاتی ہیں۔ تاہم ماضی میں مسلمان ہونے والی ہندو لڑکیاں عدالت میں ایسے بیانات بھی دے چکی ہیں کہ وہ اپنی مرضی سے مسلمان ہوئی ہیں۔پاکستان میں بسنے والی ہندو برادری کے نمائندوں کا کہنا ہے کہ نابالغ بچے نا سمجھ ہوتے ہیں اور ان میں کوئی بھی فیصلہ سمجھ بوجھ کر کرنے کی صلاحیت کم ہوتی ہے۔اس نئے قانون کے تحت کوئی بھی ایسا لڑکا یا لڑکی، جس کی عمر اٹھارہ برس سے کم ہے، مذہب تبدیل کرنے کا مجاز نہیں ہوگا۔  زبردستی مذہب تبدیل کروانے والے شخص کے لیے کم از کم پانچ سال جبکہ زیادہ سے زیادہ عمر قید کی سزا رکھی گئی ہے۔ایک ہندو رکن اسمبلی نند کمار کا نیوز ایجنسی اے ایف پی سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا، ’’یہ ایک تاریخی قانون ہے، جسے ہم منظور کر چکے ہیں۔‘‘ ان کا مزید کہنا تھا، ’’اس قانون سے اقلیتی ہندوؤں کی حالت زار بہتر ہو گی اور انہیں زیادہ تحفظ کا احساس ہوگا۔‘‘

About Daily City Press

Check Also

jb

جنرل قمر جاوید باجوہ فوج کے نئے سربراہ,لیفٹیننٹ جنرل زبیر حیات چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی مقرر

جنرل قمر جاوید باجوہ پاکستانی فوج کے نئے سربراہ  وزیراعظم نواز شریف نے لیفٹیننٹ جنرل …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *